Monthly Archives: November 2018

دنیا بھر میں مسلمان آج مجموعی طور پر کیوں ناکام ہے ۔۔۔ تحریر : رانا بشارت علی خان

ہر مسلمان کی طرح مجھے بھی ایک سوال ہمیشہ تکلیف دے محسوس ہوتا ہے کہ ہم دنیا بھر میں مسلمان آج مجموعی طور پر کیوں ناکام ہے ان ناکامیوں کی بہت سی وجوہات ہیں ان وجوہات میں یہ بھی شامل

موت سے مفر نہیں۔۔۔!۔۔۔ تحریر : رانا اعجاز حسین چوہان

موت ایک اٹل حقیقت ہے جو اس دنیا میں آیا ہے ہر نفس کو ایک نہ ایک دن موت کاذائقہ چکھنا ہے۔ موت کے میٹھے یا کڑوے ذائقے کا دار ومدار انسانی اعمال پر منحصر ہے، البتہ ذائقہ چکھنے سے

بیک وقت طلاق ثلاثہ کا مسئلہ ۔۔۔!۔۔۔تحریر: رانا اعجاز حسین چوہان

گزشتہ روز پاکستان میں نافذ قوانین کو اسلامی شریعت کے مطابق ڈھالنے کے زمہ دار آئینی ادارے، اسلامی نظریاتی کونسل کے چیئرمین ڈاکٹر قبلہ ایاز نے کونسل کے اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ بیک وقت

‎ پانچ ہزار سال پرانی شاکل نگری آج کا سیالکوٹ ۔۔۔ تحریر: شاہد مشتاق

علامہ اقبال ، احسان الہٰی ظہیر ، فیض احمد فیض ،اور گونگا پہلوان جیسی نابغہ روزگار تاریخی شخصیات کی جائے پیدائش سیالکوٹ شہر اپنے جغرافیے کے لحاظ سےبڑی افادیت کا حامل رہاہے ، اس شہر پہ ہندو اور سکھ تہذیب

خاکِ یثرب از دوعالم خوشتر است ۔۔۔ تحریر : مراد علی شاہد ۔ قطر

یہ ان دنوں کی بات ہے جب صحنِ مسجد نبوی امیں کچا ہوا کرتا تھا ۔ صحن معطر میں نیند کی آغوش میں حضرت علی ث استراحت فرما رہے ہیں ۔حالتِ نیند میں دائیں بائیں کروٹیں لینے سے حضرت علی

تعلیمی اداروں میں منشیات کا استعمال ۔۔۔ تحریر: اسماء طارق ۔ گجرات

ہمارے پروفیسر اپنے ایک طالبعلم کی اکثر تعریف کرتے رہتے تھے مگر کچھ دنوں پہلے وہ اس کے ذکر پر افسردہ ہو گئے بتانے لگے کہ عرصے بعد پرسوں میری ملاقات فیضان سے ہوئی تو میں اس کو پہچان بھی

عذاب جاریہ ۔۔۔ تحریر: مدیحہ سید

بچپن سے سنتے چلے آ رہے ہیں کہ نیکی کر دریا میں ڈال مگر اس کی جدید مثال آج کل دیکھنے کو ملتی ہے کہ کچھ بھی کر سوشل میڈیا پہ ڈال۔ بہت سے لوگ ایک ایک منٹ کی پوسٹ

ساڑھی کے فال سے ۔۔۔ تحریر: مراد علی شاہدؔ ۔ دوحہ قطر

میری طرح بہت سے لوگ اس علم سے نابلد ہونگے کہ ساڑھی باندھی جاتی ہے کہ پہنی جاتی ہے۔ایک انڈین دوست نے از راہ تفنن اپنی بائیں آنکھ دباتے ہوئے اس حقیقت سے یوں پردہ اٹھایا کہ ناف سے نیچے

احساس (دور حا ضر میں ناپید شے) ۔۔۔ تحریر : ذوالقرنین باقر

ہسپتال سے بے حسی کی ایک روداد گزشتہ روز ایک دوست سے ملاقات کے لیےمجھے شیخ زید میڈیکل کالج ( رحیم یار خان) جانا پڑا۔وہاں پہنچ کر ملاقات کے بعد ،میں نے اس سے ہسپتال دیکھنے کی خواہش کی ۔وہ

رسول اللہ ﷺ بحیثیت خطیب ۔۔۔ تحریر : عابد رحمت

آپ ﷺ کا اندازِ خطابت:۔ عربی معاشرے میں خطابت بہت بڑا وصف سمجھا جاتا تھا۔ بحیثیت مجموعی اہل عرب کی خطابت مسلم تھی، اسی بنا پر وہ غیر عربی اقوام کو عجمی (گونگا) کہتے تھے۔ آنحضور ﷺ اُمّی تھے،مگر اللہ