Monthly Archives: December 2018

مسٹر زرداری ، پاکستان پر بھاری ۔۔۔ تحریر : مسز جمشید خاکوانی

ضیا شاہد صاحب کا تاریخی تجزیہ پڑھنے کو ملا ’’احتساب میں پھنسے زرداری کا سندھ کارڈ کھلم کھلا بلیک میلنگ ہے ‘‘اس میں شک بھی کیا ہے چند دن پہلے زرداری کے اباجی حاکم علی زرداری کی ایک وڈیو دیکھی

میں عورت ہوں ۔۔۔۔۔ تحریر : فوزیہ محمود فروا

خدارا میرے زخموں پر نمک مت چھڑکو،مجھے سوچنے سمجھنے کی صلاحیت مت دو۔ مجھے میرے دکھ کا احساس نہ دلاؤ۔ مجھے لاعلم رہنے دو میرے زخموں کو پھر سے ہرا ہو جانے کے لیے بھر جانے دو۔ ۔Women studies ۔

شاعری ۔۔۔ اسماء طارق ۔ گجرات

اسے کرنا ہی نہیں تھا اعتبار مجھ پہ میرے خلوص میں وگرنہ کمی تو نہ تھی وہ لوٹ گیا مجھے قصور وار ٹھہرا کہ اسے لوٹنا ہی تھا بات وگرنہ اتنی تو نہ تھی میرے ہمدم چلنا اسے گوارہ ہی

سانحہ گونر فارم اور چلاس ہسپتال ۔۔۔ تحریر : ضیاء اللہ گلگتی

۔27۔ اکتوبرکو صبح گلگت سے مردان جانے والے بدقسمت سوزوکی کو ضلع دیامر کے حدود گونر فارم کے مقام پر جمی برف سے ٹائر پھسل کر گہری کھائی میں جاگری سوزوکی میں ٹوٹل 9سوار تھے۔جس میں سے تین موقع پہ

ہندوستان میں اقلیتوں کی ابترحالت اور دو قومی نظریہ ۔۔۔ تحریر : شاہد مشتاق

مولانا ابوالکلام آزاد کسی تعارف کے محتاج نہیں،آپ بے بدل خطیب عالم اور سیاست دان تھے، تاریخ اور سیاست کا طالب علم ان سے اچھی طرح واقف ہے، آپ 1939ءسے 1946ءتک مسلسل سات سال کانگریس کے صدر رہے ۔آپ نے

کون بنے گا سلفر بادشاہ ؟ ۔۔۔ تحریر : سید سردار احمد پیرزادہ

بہت پہلے کی بات ہے کہ ایک چھوٹے سے شہر کی پرسکون گلیوں میں ایک دیوانہ سائیکل پر پھرا کرتا تھا۔ وہ جب بھی سکول جانے والے بچوں یا پڑھے لکھے نوجوانوں کو دیکھتا تو ان کے پاس سائیکل روک

اے لوگو خاموش رہو ۔۔۔۔۔ تحریر : قادر خان یوسف زئی

کہا جاتا ہے کہ ایک چپ سو سکھ۔ شاید موجودہ ملکی سیاسی حالات اسی کا تقاضا کررہے ہیں کہ جتنا چپ رہا جائے، اُتنا ہی سکھ ملے گا اور متعدد مسائل سے بچا بھی جاسکے گا۔ لیکن مسئلہ یہ بھی

میرا بھائی : فاطمہ جناح ۔۔۔ تحریر : اسماء طارق ۔ گجرات

پی ٹی وی پر ایک ڈرامہ لگتا تھا جناح سے قائد تک جس میں قائد کے پورے اس سفر کو بہت اچھے سے پیش کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔ ہم وہ بہت شوق سے دیکھا کرتے تھے۔۔ایک دن ماما

شاعری ۔۔۔ اسماء طارق ۔ گجرات

حاکم کے سر پہ تاج ہے محکوم پاؤں کی خاک ہے تو نے دیکھی ہو گی جسموں کی غلامی، یہاں تو روحیں بھی غلام ہیں مظلوم پہ جہنم واصل ہو ظالم کی جنت ہے یہ کیسا نظام ہے جہاں ظلم

دور رکھے دیسی گھی سے خودبخود طاقت حاصل کرنا ۔۔۔ تحریر : سید سردار احمد پیرزادہ

ہم نے بچپن کی کتابوں میں سیدھے سادے اور دیسی کھیت کے بارے میں پڑھاتھا۔ اُس میں بتایا گیا تھا کہ کسان اپنی فصل کو کوؤں اور دوسرے پرندوں سے بچانے کے لئے ایک دیسی ترکیب استعمال کرتے تھے جسے