تبصرہ کتب

کتاب : کربِ نارسائی (شعری مجموعہ) شاعرہ : شہناز شازی

تبصرہ : رفعت خان (خانپور)۔۔ اک اور کلی چٹکی ،اک اور کھِلا غنچہ واہ ! کربِ نارسائی ، شہناز شازی کی بہترین تخلیقی کاوش پر نگاہ پڑتے ہی لبوں سے ادا ہوئی پہلی خوبصورت سطر اے کربِ نارسائی کی شدت

ملتان کی دھرتی کے مقدر کا ستارہ ۔۔۔۔ تحریر : سید مبارک علی شمسی

شفق کہوں ،شفیق کہوں کہ تجھے کیا کہوں اے مجید القاب کے پیچ و خم میں حیران ہے زبان میری مدنیۃالاولیاء ملتان زمانہ قدیم سے ہی علم و ادبّ اور روحانیت کا مرکز رہا ہے ۔اس کی تاریخ اُتنی ہی

عہد راحیل شریف، پاک فوج کے کارہائے نمایاں۔۔۔تحریر:اختر سردار چودھری

پاک فوج کی جرات ودلیری،عزم وحوصلے، ایمان ویقین ، ایثار وقربانی کی نظیر تاریخ میں نہیں ملتی ،وطن عزیز کی سرحدوں کا دفاع ہو یا قدرتی آفات ، امن و امان کا مسلہ ہو یا دہشت گردی کے واقعات تو

ٴٴواقعات لاہورٴٴ لاجواب تاریخی کتاب………تحریر: وقاص ظہیر

بطور انسان ہم جس معاشرے میں پروان چڑھتے ہیں ہمیں ہر دور میں نئی سے نئی معلومات کی جستجو اور تجسس رہا ہے  ، گو کہ اللہ تعالیٰ نے اپنے پیغام رساں انبیا کرام علیہ السلام کے ذریعے دنیا و

میری آنکھوں میں کتنا پانی ہے…….اختر سردار چودھری

دوسال قبل سوشل میڈیا پر جبارواصف سے اِن کے دکھ درد بھرے،غموں سے لپٹے اشعار پڑھ کر دوستی ہوئی ،اسی دوران میں نے اجازت لے کر ان کی بہت ساری شاعری کو اپنے کالموں کا حصہ بھی بنایا ۔ایک دن

صحافی ،صحافت اور سید بدر سعید کی کتاب۔۔۔تحریر:اختر سردار چودھری

صحافت کا خاص طور پر اردو صحافت کا علمی ، ادبی ،تعلیمی، ثقافتی اور تہذیبی پہلو بھی ہے۔ہم عام طور پرعلمی پہلو کو دیکھیں تو اخبار ہی واضح دیکھا جاسکتا ہے۔جس میں علم کے حوالے سے بہت ساری معلومات میسر

کتاب اپنی طرف پھر بلا رہی ہے ہمیں۔۔۔تحریر:اختر سردار چودھری

کتاب سے دوستی مگر کس کتاب سے ، یہ درست ہے کہ کتاب انسان کے ذہن کو کھولتی اور اچھی دوست بھی ہے لیکن کو ن سی کتاب؟ سب سے پہلے کتاب کا انتخاب بہت ضروری ہے۔ کتابیں تو بہت

میری آنکھوں میں کتنا پانی ہے…… تبصرہ: سید انور محمود

   دوستوں بروز بدھ 20 جولائی 2016 خوبصورت اور جدید لہجے کے شاعر جناب جبار واصف صاحب کے لیے ایک بہت ہی یاد گار دن  تھا،  اس دن جبار واصف صاحب کے شعری مجموعے”میری آنکھوں میں کتنا پانی ہے” کی

میرا کیمبل پور۔۔۔۔ تبصرہ نگار: امجد ملک

اٹک , سابقہ کیمبل پور سے دلچسبی رکھنے والوں کو ایسی کتابیں ضرور پڑھنی چاہیں. اٹک کی سب سے خاص روایت جو بہت متاثر کن تھی. وہ اسکے باسیوں کا آپس میں ملنا ملانا , ہنسی مذاق , محفلیں ,

بونا نہیں بے وقوف۔۔۔۔ تبصرہ نگار: اختر سردار چودھری ،کسووال

۔’’بونا نہیں بے وقوف ‘‘جناب حافظ مظفر محسن کی کتاب ہے۔جسے حسن عباسی صاحب نے مرتب کیا ہے ۔اس میں کل 68مضامین ہیں۔ جو 368 صفحات پر پھیلے ہوئے ہیں ۔بلکہ کہنا چاہئے کہ محسن صاحب نے زبردستی پھیلائے ہیں