کالم / بلاگ

تعلیمی نظام میں تبدیلی ناگزیر ہو چکی ہے ۔۔۔ تحریر : اسماء طارق ۔ گجرات

شاید آج سے پہلے ٹیچنگ کے شعبے کے ساتھ اتنا ظلم نہیں ہوا جتنا کہ آج ہو رہا ہے ۔ ایک تو ٹیچر معاشی طور پر مفلوج دوسرا اُس پر پابندیوں کی بھرمار ،اسے لگے بندھے کورس کو ختم کرنا

آپ ہی بتائیں قصور کس کا ہے؟۔۔۔ تحریر : مدیحہ ریاض

کان میں اسٹیتھو اسکوپ لٹکائے سفید اوور کوٹ میں ملبوس شخص نے میرے کندھے پر ہاتھ رکھ کر معذرت کی اور کہا کہ ہم آپ کی والدہ کو نہیں بچا سکے۔جیسے مالک کی رضا کہہ کر وہ آگے بڑھ گیا۔اور

۔’’مِیّاں‘‘ کی میاؤں۔ ( طنز و مزاح ) ۔۔۔ تحریر : مراد علی شاہدؔ ۔ دوحہ قطر

فارسی ضرب المثل ہے کہ’’گربہ کشتن روزِ اوّل‘‘یعنی بلی کو پہلے دن ہی مار دینا چاہئے وگرنہ بڑے ہو کر شیر کی طرح غرّانا شروع کر دیتی ہے۔بالکل اسی طرح جیسے کہ ،ایک شادی شدہ جوڑا اپنی شادی کی پچیسویں

وِسل بلوئرز مالی کرپشن کے خلاف مؤثر جادو ۔۔۔ تحریر : سید سردار احمد پیرزادہ

ترقی یافتہ معاشروں میں ’’وِسل بلوئر‘‘ بہت اہم چیز ہے۔ یہ اصطلاح ایک ایسے شخص کیلئے استعمال کی جاتی ہے جو اپنی وَرک پلیس میں کسی کرپشن یا غلط کاموں کی نشاندہی کرتا ہے۔ یعنی کسی بھی پبلک آرگنائزیشن کا

۔’’سوالوں کی قوت ‘‘ ذاتی ڈوپلمنٹ ۔۔۔ تحریر : اسماء طارق ۔ گجرات

“سوال ہی جواب ہیں ،جو سوال کرتا ہے، وہ جواب سے گریز نہیں کر سکتا ۔” تم جانتےہو ہمارے یقین کس طرح ہمارے فیصلوں، ہمارے عملوں، ہماری زندگیوں کی سمت، ہماری قسمت پر اثرانداز ہوتے ہیں اور یہ سب اثرات

شکران ۔۔۔ تحریر : مہوش احسن

میرے والد محترم جب ٹی وی پر خبریں دیکھنے بیٹھتے تو میں بہت چیڑ سی جاتی کہ کیا مصیبت ہے ہر وقت خبریں ،میں ان سے اکثر پوچھتی کہ بابا آ پ اُکتاتے بھی نہیں ؟ میری امی تو کہتی

۔’’لوح‘‘عصرِ حاضر کا عظیم ادبی شاہکار۔۔۔ تحریر : مراد علی شاہدؔ ۔ دوحہ قطر

حقائق و مشاہدات کو عملِ تسوید میں لانے کے فن کو تاریخ کہا جاتا ہے،حقائق مشتمل ہوتے ہیں حالات و واقعات پر۔اور حالات و واقعات کو جمع کرنے کا فن اسی وقت شروع ہو گیا تھاجب حضرتِ انسان کو لکھنے

اور تفرقے میں نہ پڑو ۔۔۔ تحریر : اسماء طارق ۔ گجرات

اس کا نام ارشد تھا، اس کے بارے میں مشہور تھا کہ وہ بڑا پکا مسلمان ہے، حالانکہ مجھے سمجھ نہیں آتی تھی کہ کچا اور پکا مسلمان کیا ہوتا ہے خیر اسکی وجہ سے ہمار ے ابا ہمیں ہر

آپ سب کو نیا پاکستان مُبارک ! ۔۔۔ تحریر : حاجی زاہد حسین خان

سوچا تھا ہمارے انتخابات کا اونٹ کس کروٹ بیٹھے تو کچھ لکھا جائے۔ مگر بدقسمتی سے یہ اونٹ نہ دائیں بیٹھا نہ بائیں بیٹھا بلکہ الٹا بیٹھا۔ اہل پاکستان نے اس مرتبہ ایک کھچڑی سی پکا کر رکھ دی بظاہر

بے مثال و بے نظیر قوم ۔۔۔ تحریر : رانا احسان الحق

پاکستان کے جنم لیتے ہی مصائب وآلام نے اس کی راہ تاڑی ،پاکستان کے کشادہ سینے پرشکست وہزیمت جیسے ناسورسے بڑھ کرزخموں نے چھیدکئے۔ہرمیدان میں ننگ دین وملت غداروں نے ضمیرفروشی کے مظاہرپیش کئے ۔عزتیں پامال ہوئیں ،دوشیزائوں کی آبروریزی