فاٹا اصلاحات پروگرام کا انعقاد

فاٹا (کریم اختراورکزئی سے) گزشتہ کل فاٹا یوتھ اسمبلی کے تحت انٹرنیشنل کالج اینڈسکول سسٹم میں “سالانہ تنظیمی اجلاس بعنوان “فاٹا اصلاحات” کا انعقاد کیا گیا۔
پرگرام کے مہمانان خصوصی میں ممبرقومی اسمبلی محترمہ عائشہ گلالئی ،ایڈوکیٹ جمیل قمر، سابقہ ایڈیشنل کمیشنر رحمت اللہ خان وزیر شامل تھے۔
پروگرام میں فاٹا یوتھ اسمبلی کےصدر اور فاٹا یوتھ جرگہ کے ایگزیگٹو ممبر سراج صافی نے تنظیمی مطالبات سامنے رکھتے ہوئے کہا کہ ہمارا مطالبہ ہے کہ این ایف سی ایوارڈ میں ہمیں تین فیصد جاری کریں ۔
آنے والے الیکشن میں صوبائی نشستیں دی جائے۔پشاور ہائی کورٹ اور سپریم کورٹ کا دائرہ اختیار فاٹا تک وسیع کیا جائے ۔انہوں نے کہاکہ فاٹا یوتھ اسمبلی کاموقف ہے کہ فاٹا کو خیبرپختونخواہ میں ضم کیا جائے،
پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے فاٹا یوتھ اسمبلی وزیرستان کے صدر رحمن زمان نے کہاکہ قبائلی نوجوانو! کب تک دوسروں کے جلسوں میں ڈھول کے تاپ پر ناچو گے؟. قبائلی نوجوانو۔۔!آؤ اکٹھے ہوکر فاٹاکے مستقبل کے لیے کام کریں۔
پروگرام سے مہمان خصوصی محترمہ عائشہ گلالئی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایف سی آر کا خاتمہ ہونا چاہیے۔اورقبائلیوں کوانکے آئنی حقوق ملنے چاہیے، اورجہاں تک فاٹا کے مستقبل کا فیصلہ ہے تو چاہے مرجرکرے یا الگ صوبہ بنائیں مگر قبائلیوں سے پوچھ کر کیا جائے ۔
نوجوان صحافی مفتی کریم اختراورکزئی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم قبائلی سترسال سے محرومیوں کے شکار ہیں، اب جلد از جلد ہماری محرومیوں کا ازالہ ہونا چاہیے۔اورحکومت سے مطالبہ کرتا ہوں کہ قبائل ہی کے رائے کومدنظر رکھتے ہوئے ان کے مستقبل کافیصلہ کیا جائے، اوریہ کام ریفرنڈم ہی سے ممکن ہے، اسکے بعد اگراکثریت مرجر چاہتی ہے تو مرجر اور اگر الگ صوبہ چاہتے ہیں تو الگ صوبہ دیا جائے۔ آخر میں انٹرنیشنل کالج اینڈ سکول سسٹم کے ڈائریکٹر محمد اکبر نے آنے والے مہمانوں کا شکریہ ادا کرکے پروگرام کے اختتامی کلمات ادا کیے۔

(Visited 17 times, 1 visits today)

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *