کمالیہ : 29 ستمبر2018 کی خبریں ۔ ڈاکٹر غلام مرتضیٰ سے

کمالیہ ( ڈاکٹر غلام مرتضیٰ ۔ ایڈیٹر ہماری بات پاکستان ) پرانی پولیس چوکی کو ختم کرکے کمیٹی چوک کو کشادہ کیا جائے۔بڑھتی ہوئی آبادی اور ٹریفک کی وجہ سے کمیٹی چوک کو کشادہ کرنا ضروری ہو گیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق میونسپل کمیٹی کمالیہ کے گرد دوکانداروں اور شہریوں نے پرانی پولیس چوکی کو ختم کرکے کمیٹی چوک کو کشادہ کیے جانے کا مطالبہ کیا ہے۔شہریوں کا کہنا ہے کہ کمالیہ شہر کے بازار و گلیاں تنگ راستوں پر محیط ہیں۔جبکہ میونسپل کمیٹی چوک شہر کا مین چوک ہے جو صدر بازار ، نواز چوک اور اقبال بازار کو آپس میں ملاتا ہے۔بڑھتی ہوئی آبادی اور ٹریفک کی وجہ سے مسائل بھی بڑھ رہے ہیں۔کمیٹی چوک میں واقع پولیس چوکی تھی جو کئی سال پہلے ختم ہوگئی تھی اور تھانہ پولیس کیلئے نئی بلڈنگ بن چکی ہے۔پرانی پولیس چوکی میونسپل کمیٹی کی ملکیت ہے۔مگر اب یہ جگہ سنسان پڑی ہے۔جرائم پیشہ اور نشی افراد کی آماجگاہ بنا ہوا ہے۔ عوامی مطالبہ ہے کہ پرانی پولیس چوکی کو ختم کرکے کمیٹی چوک کو کشادہ کیا جائے تاکہ ٹریفک کے مسائل میں کمی ہو۔ میونسپل کمیٹی حکام کا کہنا ہے کہ تحریری طور پر متعدد بار پولیس چوکی کو ختم کرنے کے لیے تحریر کیا جا چکا ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
کمالیہ ( ڈاکٹر غلام مرتضیٰ ۔ ایڈیٹر ہماری بات پاکستان ) جگہ جگہ زمین پر پڑی پرائیویٹ بجلی کی تاریں کسی بھی بڑے حادثہ کا سبب بن سکتی ہیں۔واپڈااہلکارو ں نے چپ سادھ لی، اصلاح احوال کا مطالبہ۔تفصیلات کے مطابق محلہ مدینہ آباد سے جھونے شاہ اور سبزی منڈی کی جانب جانے والے روڈ پر24گھنٹے لوگوں کی آمدو رفت جاری رہتی ہے ۔صبح کے وقت سیر اور سبزی منڈی جانے والے لوگوں کا رش لگا رہتا ہے تو دوسری طرف گورنمنٹ ہائی سکول نمبر2کوجانے والے طالب علم یہاں سے اٹکھیلیاں کرتے ہوئے جاتے ہیں ۔ایسی صورتحال میں روڈ پر پڑی بجلی کی ننگی خطر ناک پرائیویٹ تاریں کسی بھی بڑے حادثے کا سبب بن سکتی ہیں ۔ اہل علاقہ کے مطابق بار بار ذمہ داران اور واپڈا اہلکاران کی توجہ دلانے کے باوجود اپڈا اہلکاروں نے چپ سادھ رکھی ہے۔اہل علاقہ کا مطالبہ ہے کہ بجلی کی ان ننگی تاروں کو روڈ سے ہٹایا جائے ورنہ کسی بھی حادثہ کی صورت میں ذمہ داری محکمے اور افراد پر ہو گی۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
کمالیہ ( ڈاکٹر غلام مرتضیٰ ۔ ایڈیٹر ہماری بات پاکستان ) کمالیہ سمیت پورے پنجاب میں تعلیمی ایمرجنسی نافذ ،16سال تک کے بچےّ کیلئے تعلیم حاصل کرنا لازمی، مسلسل غیر حاضر رہنے والے طالب علم کے والد کو جرمانہ یا قید کی سزا ہوگی،پرفارمے جاری،تفصیلات کے مطابق پنجاب میں تعلیمی ایمرجنسی نافذ کر دی گئی ہے اس سلسلہ میں کمالیہ سمیت پنجاب کے تمام سکولوں کے سربراہان کو پرفارمے جاری کیے جا رہے ہیں۔جو ان والدین کو دیے جائیں گے جن کے بچےّ مسلسل غیر حاضر رہتے ہیں ان پرفارموں میں کہا گیا ہے کہ اگر آپکا بچہ مسلسل سکول سے غیر حاضر ہو گا تو اس کا نام خارج ہو سکتا ہے ایمرجنسی کے تحت 16سال کے بچوں کیلئے والدین کو تعلیم حاصل کرانا ضروری ہوگا۔ اگر والدین اپنے بچوں کو سکول نہیں بھیجیں گے تو ریئس ادارہ کی جانب سے اطلاع دینے پر مسلسل غیر حاضر رہنے والے بچےّ کے والد کے خلاف دفع 25-Aکے تحت قانونی کاروئی ہوگی۔جس کے تحت 50ہزار روپے جرمانہ یا 6ماہ کی قید یا دونوں سزائیں ہو سکتی ہیں۔ذرائع کے مطابق یہ پرفارمے آئندہ ماہ سے غیر حاضر رہنے والے بچوّں کے والدین کو جاری کیے جائیں گے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
کمالیہ ( ڈاکٹر غلام مرتضیٰ ۔ ایڈیٹر ہماری بات پاکستان ) موٹر سائیکل سواروں کے خلاف ٹریفک پولیس کی کاروائیوں کا خوف، ہیلمٹ کی خریداری اورنرخوں میں اضافہ۔ تفصیلات کے مطابق لاہور ڈویژن سمیت ملک کے بڑے شہروں میں بغیر ہیلمٹ موٹر سائیکل سواروں کے خلاف کاروائیاں دیکھ کر کمالیہ سمیت متعدد مقامی علاقوں میں موٹر سائیکل سوار چوکنا ہو گئے ہیں ۔ ٹریفک پولیس کی ممکنہ کاروائیوں کے خوف سے ہیلمٹ کی خریداروں میں غیر معمولی اضافہ ہو گیا ہے جس سے ہیلمٹ کے نرخوں میں اضافہ بھی دیکھنے کو ملا ہے۔ شہریوں کے مطابق وہ احتیاطی طور پر ہیلمٹ خرید رہے ہیں۔ٹریفک پولیس دوسرے شہروں کی طرح کسی بھی وقت موٹر سائیکل سواروں کے خلاف ہیلمٹ نہ پہننے کے الزام میں کاروائیاں شروع کر سکتی ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
کمالیہ ( ڈاکٹر غلام مرتضیٰ ۔ ایڈیٹر ہماری بات پاکستان ) نہتے شہریوں کے خون سے ہاتھ رنگنے والوں کو نظام عدل سے فرار کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔عمران خان نے سانحہ ماڈل ٹاؤن میں ملوث افراد کو عہدوں سے ہٹانے کا حکم دے کر انصاف کے تقاضے پورے کر دئیے۔ان خیالات کا اظہار تحصیل صدر پاکستان عوامی تحریک سجاد مسعود چشتی نے ہمارے نمائندہ سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کیا انکا مزید کہناتھا کہ وزیر اعظم پاکستان عمران خان نے علامہ ڈاکٹر محمد طاہرالقادری سے رابطے کے بعد سانحہ ماڈل میں ملوث افسران کو عہدوں سے ہٹانے کا حکم دیکر انصاف کے تقاضے پورے کر دیے ہیں ۔وزیر اعظم پاکستان نے ماڈل ٹاؤن میں قتل عام کا نشانہ بننے والوں کو امید کی کرن دی ہے۔عدالت نے سانحہ ماڈل ٹاؤن کے مرکزی کرداروں کو عدالت میں طلب نہ کرکے انصاف کے تقاضے پورے نہیں کیے اس لیے عوامی تحریک نے ہائیکورٹ کے فیصلہ کے خلاف سپریم کورٹ میں جانے کا فیصلہ کیاہے۔اس سلسلہ میں بینچ کے سربراہ کا اختلافی نوٹ ہماری مدد کرے گا۔اِن شاء اللہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کے متاثرین کو انصاف دلوانے کیلئے ہر رستہ اختیار کر ئے گا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
کمالیہ ( ڈاکٹر غلام مرتضیٰ ۔ ایڈیٹر ہماری بات پاکستان ) امیر جماعت اسلامی کمالیہ مرحوم رانا محمد انور خان کی یاد میں تعزیتی سیمینار،گزشتہ روز سیمینارکا انعقادالمرکز جماعت اسلامی جامع مسجد حمزہ محلہ اسلام پورہ کمالیہ میں کیا گیا۔ سیمینار سے سردار ظفر حسین نائب امیر جماعت اسلامی پنجاب,ڈاکٹر زاہدستار امیر جماعت اسلامی ٹوبہ,اور ایم شفیق شاہدملک اور سینئر صحافی رانا ارشاد انور نے خطاب کیا۔ مرحوم کی جماعت اسلامی کیلئے خدمات کو خراج تحسین پیش کیا گیا۔ مرحوم کے لیے دعائے مغفرت اور لواحقین کیلئے صبر و جمیل کی دعابھی کی گئی۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

(Visited 11 times, 1 visits today)

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *