نعتؐ شریف : زاہد توقیرؔ ۔ کمالیہ

سر یقین درودوں کا کارواں ٹھہرے
تو تیرگی میں بھی روشن مرا مکاں ٹھہرے
جو دیکھ پاؤں ترے در کی رحمت یکتا
مری نگاہ زمانے میں پھر کہاں ٹھہرے
رفیق جائیں کہاں چھوڑ کر تری قربت
کہ تیرے در پہ تو دشمن بھی بالا ماں ٹھہرے
نہ کہہ سکوں میں کوئی بات انکیؐ محفل میں
بس ایک اشک مرے دل کا ترجماں ٹھہرے
مجھے نہیں ہے سروکار سر بلندی سے
مری جبیں کے لئے تیرا آستاں ٹھہرے
جلے چراغ ہدایت وہیں وہیں زاہدؔ
نبی ؐ کے نقش کف پا جہاں جہاں ٹھہرے

(Visited 11 times, 1 visits today)

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *