کمالیہ ایلیٹ اہلکار کی بدمعاشیاں عروج پر

ڈی پی او بھی ایک معمولی اہلکار کے آگے بے بس۔

کمالیہ ( ایڈیٹر ہماری بات پاکستان ) کمالیہ سول سوسائیٹی کا اجلاس رانا عبدالروف کی زیر صدارت منعقد ہوا۔ جس میں کمالیہ میں ایلیٹ انچارج نورزمان کی طرف سے شریف شہریوں پر جھوٹے مقدمات کے اندراج اور سرعام دھمکیاں دینے کی شدید مزمت کی گئی۔ سول سوسائیٹی کے نمائندے رانا عبدالروف نے اپنے بیان میں کہا کہ نورزمان نے کمالیہ کے شریف کاروباری شخص محمد وقاص پر ایک جھوٹی ایف آئی آر درج کروائی کہ اُس نے کارسرکار میں مداخلت کی ہے۔ ایف آئی آر کے اندراج کے بعد شریف شہری پولیس کی اعلیٰ انتظامیہ سے رابطہ کرتا ہے اور اُس کے ساتھ ہی اپنی شکایت وزیراعظم شکایات پورٹل پر بھی درج کروادیتا ہے جس کی انکوائری ضلع ٹوبہ کے ایک افسر نعیم سندھو صاحب نے کی جنہوں نے اس ایف آئی آر کو غیر قانونی قرار دے کر ایف آئی آر کے اخراج کی سفارش کی۔ لیکن افسوس کی بات یہ ہے کہ وہ ایف آئی آر انکوائری میں جھوٹی ثابت ہونے کے باوجود پولیس افسران کی ملی بھگت سے خارج کرنے میں لیت ولعل سے کام لیاجارہا ہے اور انکوائری رپورٹ محمد وقاص کے حق میں آنے کے باوجود بھی ایف آئی آر کو خارج نہیں کیا جارہا جو کہ سخت ناانصافی ہے۔ پھر چند ہی روز گزرنے کے بعد ایلیٹ انچارج نے ایک اور جھوٹی ایف آئی آر کا اندراج کروادیا کہ مجھے محمد وقاص نے جان سے مار دینے کی دھمکیاں دی ہیں۔ جبکہ جس دن اور وقت کا وقوعہ بیان کیا گیا ہے اُس کی مکمل سی سی ٹی وی فوٹیج موجود ہے کہ وقوعہ کے وقت محمد وقاص اپنے میڈیکل سٹور پر موجود تھا۔ سول سوسائیٹی نے ایلیٹ اہلکار نور زمان کے تمام غیر قانونی اقدامات کی مذمت کی ہے اور آر پی او فیصل آباد سے اپیل کی ہے کہ ایلیٹ اہلکار کی بدماشی سے شریف شہریوں کو تحفظ دلایا جائے اور پولیس کا عوام پر اعتماد کو بحال کیا جائے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اگر اعلیٰ افسران ایلیٹ اہلکار نورزمان کے خلاف بروقت کاروائی نہیں کرتے تو ہم سڑکوں پر آکر اپنا احتجاج ریکارڈ کروائیں گے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

(Visited 22 times, 1 visits today)

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *