مسلم ممالک نے شام میں خون ریزی بند نہ کروائی تو امریکی اسلحے کے شعلے پڑوس کے ممالک کو بھی اپنی لپیٹ میں لے سکتے ہیں

شام کے عوام تاریخ کے بد ترین قتل عام کا نشانہ بنے ہوئے ہیں.شام کے لاکھوں مسلمان بے گناہی کی سزا میں جانوں کی قربانی دینے کے باوجود عالم اسلام کی بے حس قیادت کو متوجہ نہیں کر سکے. عالمی طاقتوں نے عراق لبیاکے بعد شام کو اپنے جدید اسلحے کی تجربہ گا ہ بنا لیا ہے. رانا بشارت علی خان ۔۔۔ صدر عالمی تحریک انسانی حقوق

برسٹل ( ڈاکٹر غلام مرتضیٰ ۔ ایڈیٹر ہماری بات پاکستان ) عالمی تحریک انسانی حقوق برطانیہ کے پاکستانی نژاد صدر رانا بشارت علی خان نے شام میں بے گناہ اور نہتے شہریوں کی جانوں کی پامالی کو عالمی ضمیر کے لئے سوالیہ نشان قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ شام کے معصوم شہری لاکھوں جانوں کی قربانیاں دینے کے باوجود اپنے ملک کو محفوظ نہیں بنا سکے کیونکہ شام کو عالمی طاقتوں نے اپنے جدید اسلحے کی تجربہ گاہ بنا لیا ہے . شام کے عوام تاریخ کے بد ترین قتل عام کا نشانہ بنے ہوئے ہیں.شام کے لاکھوں مسلمان بے گناہی کی سزا میں جانوں کی قربانی دینے کے باوجود عالم اسلام کی بے حس قیادت کو متوجہ نہیں کر سکے. عالمی طاقتوں نے عراق لبیاکے بعد شام کو اپنے جدید اسلحے کی تجربہ گا ہ بنا لیا ہے اور ایک مزید اسلامی ملک کومکمل تباہی کے دہانے پر لا کھڑا کیا ہے.رانا بشارت علی خان نے اپنے خصوصی بیان میں شام میں جاری خونریزی کو عالمی قوتوں کا قابل نفرت رویہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ مسلم ممالک نے شام میں خون ریزی بند نہ کروائی تو امریکی اسلحے کے شعلے پڑوس کے ممالک کو بھی اپنی لپیٹ میں لے سکتے ہیں. عراق کی تباہی اور لیبیا کو کھنڈرات کا ملک بنانے کے بعد دنیا کی تھانے دار طاقتوں نے شام کے معصوم اور بے گناہ شہریوں کو تختہ مشق بنا لیا ہے جہاں شہریوں کی ہلاکتوں کی تعداد لاکھوں سے تجاوز کرچکی ہے جبکہ زخمیوں کی تعداد کا تخمینہ شام کی بے بس اور کٹھ پتلی حکومت کے بس کی بات نہیں رہی. رانا بشارت علی خان نے کہا کہ مسلمان حکمرانوں کی مجرمانہ خاموشی دنیا بھر کے مسلمانوں میں خوف اور عدم تحفظ کے باعث بن رہی ہے. شام کے شہریوں کے جان و مال کو جس بے دردی اور ظالمانہ انداز سے تباہ کیا جا رہا ہے وہ دنیا کی تاریخ کا بدترین سانحہ بن چکا ہے.مسلم حکمرانوں نے شام کے عوام کے تحفظ اور مزید خونریزی روکنے کے لئے اپنا کردار ادا نہ کیا اور شام میں فوری جنگ بندی اور شہریوں کی جان و مال کے تحفظ کے لئے اپنا اثر ورسوخ استعمال نہ کیا تو شام کے عوام پر برسنے والی امریکی اسلحے کی آگ پورے مشرق وسطی کا اپنی لپیٹ میں لے سکتی ہے.شام کے ان گنت تاریخی شہر اور قصبے صفحہ ہستی سے مٹائے جا چکے ہیں خطرہ ہے کہ امت مسلمہ نے شام میں نہتے شہریوں، معصوم بچوں اور خواتین پر امریکی اور شامی حکام کی مسلسل بمباری روکنے کے لئے فوری اقدامات نہ کئے تو مسلم امہ کا اہم ترین ملک شام دنیا کے نقشے سے ہی معدوم ہوجائے.

(Visited 6 times, 1 visits today)

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *