گجرات ضلعی انتظامیہ مکمل طور پر ناکام تمام اداروں میں مسائل کے ڈھیر عوام ذلیل وخوار۔گجرات میں ہسپتالوں ،تھانے ،چوکیوں اور مقدس تعلیمی شعبہ جیسے اداروں میں بھی عوام ذلیل وخوار ہوگئی ۔وزیر اعلیٰ پنجاب اور کمشنر گوجرانوالہ سے فوری طور پر نوٹس لینے کا مطالبہ

گجرات (رپورٹ سلیمان بٹ سے) تفصیلات کے مطابق گجرات میں ہسپتالوں ،تھانے ، چوکیوں اور مقدس تعلیمی شعبہ جیسے اداروں میں بھی عوام ذلیل وخوار ہوگئی ۔ضلعی انتظامیہ صرف اخبارات کی زینت تک کھلی کچہریوں کے انعقاد پر کاغذی کاروائی کرکے خود کو اور اعلیٰ افسران کو مطمن کرنے کے در پہ ہیں۔ گزشتہ دو ماہ سے ڈی ای او ایجوکیشن اور ڈی سی گجرات کو لنگے سکول کے ماسٹر کی زیادتی کیخلاف درخواست پر تا حال کوئی کاروائی نہ ہوسکی۔مممد نواز رانجھا نے ڈسٹرکٹ گجرات پریس کلب کے ممبران سے تحریری درخواست دی کہ محمد نواز رانجھا سکنہ لنگے کا رہائشی و سکونتی ہوں اور میرا بیٹا محمد نواز گورنمنٹ رضویہ ہائی سکول لنگے میں دسویں کلاس میں زیر تعلیم ہے اور تصور نواز میرا ایک اکلوتا بیٹا ہے جو کہ تین بہنوں کا اکیلا بھائی ہے میرے بیٹے تصور نواز کو اُستاد طارق بٹ نے رات9بجے تک بغیر بتائے بغیر کسی وجہ سکول میں بٹھائے رکھا فدوی اپنی بچی کے ہمراہ پریشانی میں ڈھونڈتے ڈھونڈتے گیاتو بچہ سکول میں بیٹھا ہوا تھاطارق صاحب موبائل پر مصروف تھے میں نے بچے کو بغیر اطلاع رات دیر تک بٹھانے پر پوچھا تو انہوں نے مجھے اور میری بیٹی کو غیر مہذبانہ اور جاہلانہ روئیہ سے برتاؤ کیا میں نے نہایت تحقیرانہ کیفیت سے گھر آگیا صبح بچےّ کو سکول بھیجا ساتھ گیا تو ہیڈ ماسٹر علی بہادر نے طارق بٹ نے میرے بیٹے کو سکول سے بے عزت اور گالیاں نکال کرسکول سے نکال دیا اور کہاں کہ سکول آپ کے باپ کا نہیں ہمارا ہے ہم جو چاہے کرے ہم آپ کو نہیں پڑھائے گئے لہٰذا میری بیٹی کی بے عزتی اور توہین میرے اکیلے بیٹے کے مستقبل کو خراب کرنے والوں اور کاروائی کرنے پر دھمکیاں دینے والوں کے خلاف قانونی کاروائی کی جائے اور میرے بچےّ کا مستقبل خراب ہونے سے بچایاجائے۔اس درخواست پر تاحال کوئی کاروائی نہ کی گی جبکہ اُس کے بچےّ کا مستقبل بھی خرابہوگیا محمد نواز نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مطالبہ کیاہے کہ اعلیٰ افسران ایسے اساتذہ جو کہ اس پاک مقدس ادارے کے تقدس کو پامال کررہے ہیں اور بچوّں کے مستقبل سے کھیل رہے ہیں کے خلاف قانونی کاروائی کی جائے۔

(Visited 15 times, 1 visits today)

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *