شاعری ۔۔۔ اسماء طارق ۔ گجرات

راستے گہرے الجھے ہیں
چلو گھر چلتے ہیں

قدم اٹھتے نہیں اب
چلو گھر چلتے ہے

لاحاصل کی جستجو نہیں اچھی
چلو گھر چلتے ہیں

مناتے مناتے تھک جاو گے
چلو گھر چلتے ہیں

یوں دل جلانا بھی تو اچھا نہیں
چلو گھر چلتے ہیں

فقط خوابوں میں ہی رہنا مناسب نہیں
چلو گھر چلتے ہیں

سورج ڈوب گیا ہے
چلو گھر چلتے ہیں

پنچھی بھی اڑ گئے ہیں
چلو گھر چلتے ہیں

اندھیرے سے ڈر لگتا ہے
چلو گھر چلتے ہیں

سنو! کچھ کہنا ہے
چلو گھر چلتے ہیں ۔

(Visited 11 times, 1 visits today)

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *