شاعری ۔۔۔ اسماء طارق ۔ گجرات

اسے کرنا ہی نہیں تھا اعتبار مجھ پہ
میرے خلوص میں وگرنہ کمی تو نہ تھی

وہ لوٹ گیا مجھے قصور وار ٹھہرا کہ
اسے لوٹنا ہی تھا بات وگرنہ اتنی تو نہ تھی

میرے ہمدم چلنا اسے گوارہ ہی نہ تھا
میری ہمنوائی وگرنہ اتنی بری تو نہ تھی

زمانے کے خاطر اسے آنا ہی تھا
میری وگرنہ اسے اتنی فکر تو نہ تھی

رسم دنیا نبھانی تھی اسے
میرا ہونا وگرنہ اتنا ضروری تو نہ تھا

(Visited 10 times, 1 visits today)

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *