تحریک انصاف میں ٹکٹوں کی تقسیم پر ناانصافی، بنی گالہ کے باہر بھرپور احتجاج

اسلام آباد ( ڈاکٹر غلام مرتضیٰ ۔ ایڈیٹر ہماری بات پاکستان ) پاکستان تحریک انصاف کی طرف سے ٹکٹوں کی غیر منصفانہ تقسیم پر تحریک انصاف کے نظریاتی کارکنوں نے نظرانداز کئے جانے پر احتجاج شروع کر دیا،اسلام آباد میں تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کی رہائش گاہ بنی گالہ کے باہر خیبرپختونخوا، گوجرانوالہ، راولپنڈی اور دیگر شہروں کے کارکنوں نے بڑی تعداد میں پہنچ کر احتجاج ریکارڈ کروایا جبکہ فیصل آباد اور گوجرانوالہ میں بھی کارکنان نے احتجاج کیا اور مسلم لیگ (ن) کے رہنما چوہدری نثار علی خان کے آبائی حلقہ این اے 59 سے سرور خان کو ٹکٹ جاری کرنے پر تحریک انصاف راولپنڈی کے رہنما کرنل(ر)راجہ صابر کی قیادت میں کارکنوں نے بنی گالہ کے باہر احتجاج کیا ہے اور کہا ہے کہ اگر یہ فیصلہ واپس نہ لیا گیا تو سرور خان کی حمایت نہیں کریں گے۔

اسی طرح راولپنڈی میں بھی دونوں حلقوں میں شیخ رشید کو امیدوار بنانے پر بھی تحریک انصاف کے نظریاتی کارکنان نے شدید احتجاج کیا ہے۔دریں اثناءشہریار آفریدی، محمد علی خان آفریدی اور شوکت یوسفزئی کو نظرانداز کرنے پر بھی سیاسی حلقوں نے حیرت کا اظہار کیا ہے اور کہا ہے کہ لوٹوں کو ٹکٹ دیئے گئے ہیں نظریاتی کارکنان نظرانداز کئے جا رہے ہیں، شوکت یوسفزئی کا کہنا ہے کہ پرویز خٹک کو نہ جانے ان سے کیا مسئلہ ہے اور کس بات کا بدلہ لے رہے ہیں، تمام باتیں عمران خان کے علم میں لائی جائیں گی۔

تفصیلات کے مطابق ہفتہ کو ٹکٹوں کے معاملے پر من پسند افراد کو نوازنے کے الزام پر ناراض راولپنڈی اور مردان کے کارکن بنی گالہ پہنچ گئے، کارکنوں نے تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کی رہائش گاہ کے باہر پارلیمانی بورڈ کے فیصلے کے بعد شدید نعرے بازی کی۔ مظاہرین نے شکوہ کیا کہ مردان کے صوبائی حلقہ پی کے 52اور 53میں ٹکٹوں کی تقسیم کے دوران نظریاتی کارکنوں کو نظر انداز کیا گیا، راولپنڈی والوں کو حلقہ این اے 59سے کرنل(ر) راجہ صابر کی جگہ غلام سرور خان کو ٹکٹ دینے پر اعتراض ہے، مظاہرین کے مطابق غلام سرور خان نہ پنڈی میں پیدا ہوئے اور نہ ہی یہاں رہتے ہیں اور انہیں ٹکٹ جاری کر دیا گیا ہے۔ مظاہرین نے کہا کہ پی ٹی آئی کو چند لوگوں نے ہائی جیک کر دیا ہے، کارکنوں کا حق چھین لیا ہے۔

پاکستان تحریک انصاف نے موروثی سیاست پر گوجرانوالہ کے 3خاندانوں کو نواز دیاہے، سابق وزیر رانا نذیرمیاں طارق فیملی کو 3,3ٹکٹ جاری کر دیئے، حامد ناصر چٹھہ کے بیٹھے احمد چٹھہ کو 2ٹکٹ جاری کئے گئے، پی ٹی آئی کے کھلاڑی امتیاز صفدر کو ٹکٹ نہ مل سکا، ناصر چٹھہ کےلئے حلقہ این اے 79اور پی پی 52سے میدان میں اتریں گے۔پاکستان مسلم لیگ (ن) چھوڑ کر پی ٹی آئی میں شمولیت کرنے والے رانا نذیر حلقہ این اے 83سے الیکشن لڑیں گے جبکہ حلقہ پی پی 63سے رانا عمر نذیر کوبھی گرین سگنل مل گیا، پیپلز پارٹی چھوڑ کر پی ٹی آئی میں شمولیت کرنے والے سابق وفاقی وزیر امتیاز صفدر کو ٹکٹ نہ مل سکا۔

تحریک انصاف نے 7امیدوار نامزد کئے تھے، قومی و صوبائی حلقوں کےلئے، جن میں سے کسی ایک کارکن کو بھی ٹکٹ نہیں مل سکا، اس صورتحال کے بعد آرائیں برادری نے ہنگامی طور پر اجلاس طلب کیا ہے۔آرائیں برادری نے پاکستان تحریک انصاف کو خیرباد کہنے کا فیصلہ کیا،سابق ایم پی اے چوہدری شبیر مہر ایک دو روز میں اعلان کریں گے۔ اجلاس میں باقاعدہ طور پر عندیہ دیا گیا کہ یہ تمام لوگ پارٹی کو خیر باد کہہ دیں گے۔

سابق ایم پی اے شبیر مہر کی سربراہی میں اجلاس ہوا۔ پارٹی قائدین میں پھوٹ کی گونج سوشل میڈیا تک بھی پہنچ گئی ہے۔ تحریک انصاف فیصل آباد میں بھی پھوٹ پڑ گئی ہے، شیخ سلمان عارف نے پریس کانفرنس میں رائے حسن اور چوہدری سرور پر کوٹہ سسٹم چلانے کا الزام لگایا، ساہی برادران چار دن پہلے آئے اور 3سیٹیں دے دی گئیں، حلقہ این اے 101میں فواد چیمہ الیکشن لڑے تھے، 50ہزار سے زیادہ ووٹ لیتے تھے، اجمل چیمہ نے صوبائی سے 22سے 23ہزار ووٹ لئے تھے، نواب شیر بشیر کو این اے کی سیٹ پر نواز دیا گیا، اسی طرح علی اختر اور ظہیر الدین جن کی مشہوری (ق) لیگ سے ہے انہیں بھی ٹکٹ سے نواز دیا گیا ہے۔

(Visited 15 times, 1 visits today)

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *