وزیر اعظم عمران خان کا قطر میں پاکستانی کمیونٹی سے خطاب ۔۔۔ رپورٹ : مراد علی شاہدؔ ۔ دوحہ قطر

پاکستان کی خارجہ پالیسی مرتب کرتے ہوئے اس بات کا خاص خیال رکھا گیا کہ برادر اسلامی ممالک سے برادرانہ اور مضبوط روابط روا رکھے جائیں گے ۔خصوصا مشترکہ مفادات کے حصول کو مد نظر رکھا جائے گا۔اگر پاکستان کی خارجہ پالیسی کو مدنظر رکھا جائے تو ہم دیکھتے ہیں کہ خلیج میں واقع اسلامی ملک قطر سے ہمارے دیرینہ برادرانہ تعلقات قائم ہیں،اگرچہ ان تعلقات کو کبھی کبھار نشیب اور سرد مہری کا بھی سامنا کرنا پڑا تاہم دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کبھی مستقل بنیادوں پر منقطع نہیں ہوئے۔اس اصول(برادرانہ تعلقات)کو مدنظر رکھتے ہوئے اب تک جن ممالک(سعودی عرب،انڈونیشیا،ترکی،متحدہ عرب امارات،قطر)کا دورہ کیا گیا ہے وہ سب کے سب اسلامی ممالک ہیں۔وزیر اعظم عمران خان جب قطر تشریف لائے تو وزیر اعظم قطر شیخ عبداللہ بن نصر بن خلیفہ آل ثانی ،امیر قطر الشیخ تمیم بن حمد آل ثانی اور قطر کی بزنس کمیونٹی سے ملاقات ان کے دورہ کا اہم مقصد تھا۔امیر قطر الشیخ تمیم بن حمد آل ثانی اور وزیر اعظم قطر سے ملاقات کے دوران وفود نے دو طرفہ تعلقات،کاروبار،خارجہ پالیسی اور مختلف شعبوں میں ترقی کے لئے کئی یاد داشتوں پر دستخط بھی کئے،اور اس بات کا اعادہ بھی کیا گیا کہ دونوں ممالک اپنے تعلقات میں مزید بہتری بھی لے کر آئیں گے۔قطر میں موجود پاکستانی کمیونٹی سے وزیر اعظم عمران خان کا خطاب اس لئے بھی خاص اہمیت کا حامل تھا کہ یہ پہلے پاکستانی وزیر اعظم ہیں جنہیں اس طرح عوام سے خطاب کا موقع دیا گیا۔اس خطاب کے انتظام و انصرام کو پی ٹی آئی کو مقامی قیادت نے سفارتخانہ پاکستان کے اشتراک سے قطر کے ایک شہر واکرہ کے الواکرہ سٹیڈیم میں ممکن بنایا،جس میں کم و بیش پندرہ ہزار پاکستانی خطاب کے دوران موجود تھے جو بلاشبہ ایک بڑی تعداد خیال کی جاتی ہے۔
تقریب کا آغاز تلاوت قرآن مجید سے کیا گیا جس کے بعد سفیر پاکستان سیداحسن رضا شاہ نے مختصر خطاب میں وزیر اعظم کو دورہ قطر کی مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ بلاشبہ وزیر اعظم کا دورہ قطر پاکستان کی خارجہ پالیسی اور دو طرفہ تعلقات میں سنگ میل ثابت ہوگا اور دونوں ممالک کے درمیان تعلقات میں مزید بہتری آئے گی ۔ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے اپنے خطاب میں کہا کہ امید ہے کہ نئی حکومت کے ساتھ قطر کے تعلقات میں وسعت،مضبوطی اور استحکام پیدا ہوگا۔دونوں ممالک کے لئے مختلف میدانوں میں نئی راہیں متعین ہونگی اور نئے اہداف کے حصول کو دونوں ملک مل کر ممکن بنائیں گے۔سفیر پاکستان کے بعد وزیر اعظم پاکستان عمران خان نے قطر میں موجود پاکستانیوں سے خطاب میں کہا کہ مجھے خوشی ہوئی کہ آج میں پہلی مرتبہ الیکشن کے بعد قطر کے پاکستانیوں سے خطاب کر رہا ہوں اور مجھے تارکین وطن سے خاص محبت ہے کیونکہ مجھے پتہ ہے کہ آپ لوگ کتنی مشکلات اور محنت سے بیرون ملک سے پیسہ کما کر اپنے خاندان اور ملک کی خدمت کرتے ہیں۔یاد رکھیں جو پیسہ آپ اپنے ملک بھیجتے ہیں اس سے ملک چل رہا ہے اس لئے آپ صحیح معنوں میں ملک کے ہیرو ہیں۔آپ بے فکر ہو جائیں ان شااللہ ہم مل کر اس مشکل وقت سے پاکستان کو نکالیں گے۔قطر کی موجودہ حکومت کی تعریف میں عمران خان نے کہا کہ قطر حکومت اپنی ایمانداری ،تعلیم اور لوگوں کی فلاح کی وجہ سے آج دنیا میں اپنا مقام بنائے ہوئے ہے۔اس کے علاوہ انہوں نے پاکستان میں سیاحت کی ترقی کے عزم کا بھی اظہار کیا۔آخر میں امیر قطر الشیخ تمیم بن حمد آل ثانی کا خصوصی شکریہ ادا کیا کہ انہوں نے پاکستان کے ساتھ مکمل تعاون اور عزم کا اظہار کیا ہے۔

(Visited 6 times, 1 visits today)

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *