تفسیری ترجمہ سلطان البیان ۔ عوام اہلسنت پراحسان ۔۔۔ تحریر : سید مظہر حسین شاہ کاظمی موچھ

علم ایک ارتقائی چیز ہے اس لیے ہر کتاب کے مضامین اپنے وقت کے ساتھ اپنی افادیت کو کھو دیتے ہیں بلکہ سائنس کی دریافتیں جو بلند و بالا دعویٰ کرتی ہیں وہ بھی بدلتی رہتی ہیں ان پر بھی نقا د نئے نئے سوالات اٹھاتے رہتے ہیں اور پرانی باتوں کو نئے حقائق کے ساتھ رد کر دیتے ہیں تاریخ انسانی میں بھی ابھی یہ نہیں ہوا ہے کہ کسی دانشور محقق مصنف سائنس دان یا فلسفی نے اپنی بات کو حرف آخر قرار دیا ہو بلکہ زمانے کے ساتھ ساتھ ان کی کئے باتوں میں تغیرو تبدل ہو جاتا ہے ۔لیکن ایک کلام ایسا بھی ہے جس کی ہر بات اٹل اور حرف آخرہے اور وہ ہے اللہ عزوجل کی لاریب کتاب قرآن مجید جیسا کہ ارشاد باری تعالیٰ عزوجل ہے۔ترجمہ: یہ وہ کتا ب ہے جس میں کوئی شک نہیں۔اس طرح کا دعویٰ کوئی بڑے سے بڑا دماغ اپنی کسی ایک بات پر نہیں کر سکتا لیکن قرآن مجید ایک ایسی کتا ب مبین ہے جس کے ہر ہر صفحہ پر نئے نئے مضامین بیان کئے گئے ہیں زندگی کا کوئی مسئلہ ایسا نہیں جس کا حل اس کتاب روشن میں نہ ہو بلکہ یہ وہ کتاب عظیم ہے جس میں مذہب ، فلسفہ ، سائنس ،طب ، تاریخ ، انسانی علوم، جغرافیائی علوم ، معاشرتی علوم، روحانی علوم غرض کونسا علم ہے جس کو قرآن عظیم میں بیان نہ کیا گیا ہو بلکہ اب تو جدید ترین سائنسی ایجا دیں بھی اس کی موافقت میں ہو رہی ہیں یہاں تک کہ ایک فرانسیسی سائنس دان مورس بو کائے کو اپنی اپنی کتاب قرآن بائبل اور سائنس میں یہ اقرار کرنا پڑا کہ میں نے اس کلام الٰہی میں کوئی ایسی بات نہیں پائی جو سائنس نہ مانتی ہو ۔اس طرح ایک مصنف لورا ویسیا والرکو اپنی کتا ب Apologie-De Islamism میں لکھتے ہیں قرآن مجید کے الہامی ہونے کیلئے اتنا ہی کافی ہے کہ زمانہ اس میں زیر و زبر کا تغیر نہ لا سکا پروفیسر اے جی ایبرے جھون نے کتاب الیٰ کا ترجمہ بھی کیا ہے وہ کہتا ہے اہل مغرب کے دلوں میں قرآن مجید کے سلسلہ میں غلط فہمیاں ہیں اس کی بڑی وجہ ان کے پاس درست قسم کے ترجمے نہیں ہم اپنے مضمون میں ایسی بات کہنا چاہتے ہیں کہ لوگوں کو قرآن مجید سمجھنے کیلئے درست ترجمہ کا انتخاب کرنا چاہیے تاکہ امت کو انتشار ، فرقہ واریت سے بچایا جا سکے ایسا ہی قرآن مجید کو آسان اردو زبان میں ترجمہ کرنے کی سعادت ہمارے ممدوح مکر م جناب الحاج علامہ سلطان احمد قادری صاحب کو ہوئی انہوں نے قرآن مجید کو سمجھنے کیلئے آسان اردو زبان میں قرآن حکیم کا ترجمہ’’ سلطان البیان ‘‘سے کیا ہے علامہ اس سے پہلے بھی کافی کتب تصنیف کرچکے ہیں جس میں
۱۔ سیرت نبوی علیہ الصلوۃ والسلام کے چند پہلو
۲۔ جنت کا راستہ (حصہ اول، دوم ، سوم) نوری ستارے ، شان رسول( علیہ الصلوۃ والسلام )عورتوں کے مسائل ، وضو، غسل، تیمم کے مسائل وغیرہ اہل علم سے داد وصول کر چکے ہیں اسکے علاوہ ان کا ایک عظیم کام ’’دائمی نقشہ اوقات نماز ‘‘ بھی ہے ۔
اس کے علاوہ میلاد النبی علیہ الصلوۃ والسلام کے جلوس کی ابتداء اورقیادت 1980 میں آپ نے کی ۔اسی وقت سے اس کی قیادت اور سر پرستی کرتے آرہے ہیں۔
موصوف دین کی خدمت کے ساتھ ساتھ دنیاوی خدمات بھی بطورعربی ٹیچرکے سرانجام دے چکے ہیں۔
’’سلطان البیان‘‘ جو آسان اردو زبان میں ہے پڑھتے وقت ہو سکتا ہے اس میں کہیں صرفی یا نحوی غلطی ہو یا پرنٹ کی غلطی ہو تو مہربانی کر کے مصنف بذریعہ ٹیلی فون یا خط اطلاع دی جائے تاکہ اگلے ایڈیشن میں اس کا ازالہ ہو سکے ۔’’سلطان البیان ‘‘آپکو مترجم کے ایڈریس ’’مفتی سلطان احمد قادری محلہ دروخیل ،نزدمسجدورالیاں والی P/Oپائی خیل تحصیل و ضلع میانوالی موبائل 03017803657 اوراس کے علاوہ آپ کو یہ مکتبہ قاردیہ سروریہ سلطانیہ نیومین بازار موچھ موبائل 03016399375 سے ہدیۃً مل سکتا ہے ۔
اسکی قیمت نہایت مناسب ہے یعنی صرف 500 سو روپے جب کہ اگر ہم کوئی چھوٹا سا ناول یا ایک 100 صفحے کی کتاب بھی لیں تو اسکی قیمت 500 سو یا 700 سو روپے ہوتی ہے ۔اللہ پاک مفتی سلطان احمدقادری کے علم وعرفان میں مزیدبرکتیں عطاکرے۔قبلہ مفتی صاحب کوایمان کی سلامتی کے ساتھ ساتھ صحت کاملہ سے نوازے تاکہ دین متین کی خدمت زیادہ سے زیادہ کرسکیں۔اللہ پاک قبلہ مفتی صاحب کاسایہ تادیرعوام اہلسنت کے سروں پرقائم ودائم فرمائے۔وماعلیناالاالبلاغ المبین

(Visited 10 times, 1 visits today)

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *