Tag Archives: عبدالرؤف خاں

رحمت اللعالمین صلی اللہ علیہ وسلم اور توہین آمیز خاکے ۔۔۔ تحریر: عبدالرؤف خاں

اُس کا نام آرنوڈوین ڈورن تھا۔ اُس کا تعلق ہالینڈ کی ایک تنظیم پی وی وی سے تھا۔ جس کامطلب ہے پارٹی آف فریڈم۔ وہ اسلام کے سخت خلاف تھا۔ محمد رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کو نعوذ باللہ

اے سی صاحب، مٹ جائے گی مخلوق تو انصاف کرو گے؟ ۔۔۔ تحریر : عبدالرؤف خاں

آپ نے ایک بھیڑئیے اور میمنے کی مشہور کہانی تو سُنی ہوگی ۔ کہ ایک بھیڑئیے نے میمنے کو جنگل میں ندی کنارے پانی پیتے دیکھا تو اُسے ہڑپ کرنے کا ارادہ بنا لیا۔ بھیڑیا اپنی گرجدار آواز میں بولا

تحریکِ آزادی کا پسِ منظر ۔۔۔ تحریر : عبدالرؤف خاں

ایک ایسے شخص کے پاس جا بیٹھا جسے میں پہلے بھی اسی کمالیہ کی گلیوں میں ننگے پیر دیکھا کرتا تھا لیکن لوگ اسے پاگل کہتے تھے۔ یہ پاگل کبھی گالیاں دے رہا ہوتا تو کبھی قومی ترانہ بُلند آواز

عمران خان ، روحانیت اور شعبدہ بازی ۔۔۔ تحریر : عبدالرؤف خاں

روحانیت سے عمران خان کا اُس وقت سے تعلق ہے جب اُنکی عمر صرف چودہ برس تھی۔ اپنی کتاب “میں اور میرا پاکستان” میں صفحہ نمبر اکیاسی پرعمران خان خود لکھتے ہیں۔ “ایسے کئی لوگوں سے مجھے واسطہ رہا جو

علماء زوال کا شکار کیوں ہیں؟۔۔۔ تحریر : عبدالرؤف خاں

مجھے وہ وقت بہت اچھی طرح سے یاد ہے کہ جب مسجدوں میں تل دھرنے کی جگہ نہ ہوتی تھی۔ جب علماء حق کی ایک تقریر حکومتی ایوانوں میں زلزلہ پیدا کردیتی تھیں۔ پولیس اور سی آئی ڈی کے جاسوس

نام نہاد عزت دار۔۔۔پیشہ ناجائز گردہ فروشی ۔۔۔ تحریر : عبدالرؤف خاں

فہد حجاب نام کا ایک سعودی شخص سعودی ائیرلائین کی ایک پرواز سے لاہور ائیرپورٹ پر لینڈ کرتا ہے۔ فہد وہیل چئیر پر اُترتا ہے تو اُسے چند پاکستانی ائیرپورٹ پر خوش آمدید کہتے ہیں اور باہر ایک ایمبولینس کھڑی

سفر نامہ ویت نام ۔۔۔ تحریر : عبدالرؤف خاں

اللہ بھلا کرے میری کمپنی ڈائریکٹر کا کہ جنہوں نے ایک دن مجھے کہا کہ یہ کیا تُم چوبیس گھنٹے مشینوں میں رہ رہ کر مشین ہی بنتے جارہے ہو؟ چلو اس ہفتے کے اختتامی ایّام میں کہیں  سیر کے

خون اور تلوار کے گیت!!!۔۔۔ تحریر : عبدالرؤف خاں

اگر عام آدمی کا خون جزبات میں کھولتا ہے تو بھُٹو کا خون ایسا ہے جب جزبات بڑھکتے ہیں تو ان کا خون اُبلتا ہے۔ سرجانی ٹاؤن کراچی میں ایک چھوٹا سا جلسہ ہے جس سے میر مرتضیٰ بھٹو خطاب

وہ انتظار تھا جس کا، یہ وہ سحر تو نہیں ۔۔۔ تحریر : عبدالرؤف خاں

ہاں شاید اگر آج سے برسوں پہلے مسجدوں کے لاؤڈ سپیکروں پر چیختے چنگھاڑتے، مونہہ سے جھاگ نکالتے ہوئے دوسرے فرقے کو کافر کہنے والے دین فروشوں کو چوک میں کھڑا کرکے ٹکٹکی پر باندھ کر ننگا کرکے کوڑے مارے