تحریک آزادی جموں کشمیر کے تحت آل پارٹیز کشمیر کانفرنس منعقد

ٖفیصل آباد ( ڈاکٹر غلام مرتضیٰ ۔ ایڈیٹر ہماری بات پاکستان ) تحریک آزادی جموں کشمیر کے تحت آل پارٹیز کشمیر کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے سیاسی و مذہبی رہنماؤں نے کہا ہے کہ پاکستانی قوم کل بھی کشمیریوں کے ساتھ تھی،آج بھی ہے اور کل بھی رہے گی۔بھارتی تجارت و ثقافت کا بائیکاٹ کیا جائے۔کشمیر کا مسئلہ صرف مسلمانون کا نہیں بلکہ انسانیت کا مسئلہ ہے۔مذاکرات کے نام پر بھارت نے ہمیشہ دھوکا کیا۔کشمیر پاکستان کا حصہ ہے اور رہے گا۔مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے مختلف آپشن پیش کئے جاتے رہے۔کشمیریوں نے خون دیکر اس مسئلہ کو زندہ رکھا ہے۔ لاکھوں شہادتیں پیش کی گئیں۔ آج پوری کشمیری قوم پاکستانی پرچم اٹھائے کھڑی ہے۔فروری کا پورا ہفتہ اہل کشمیر کے ساتھ اظہار یکجہتی کے طور پر منائیں گے۔بڑا پروگرام5 فروری کو ہوگا، جی۔ٹی۔ایس چوک سے ضلع کونسل چوک تک ’’یکجہتی کشمیر کارواں‘‘ میں تمام سیاسی و مذہبی جماعتیں شریک ہوں گی۔ ان خیالات کا اظہارشیخ فیاض احمد زونل مسؤل جماعۃ الدعوۃ فیصل آباد،صاحبزادہ مفتی ضیاء مدنی رہنما متحدہ علماء کونسل ،حافظ عبدالرؤف رہنما تحریک آزاد ی جموں کشمیر،قاری شبیر عثمانی جمعیت علماء کونسل،ملک وحید رہنما پاکستان مسلم لیگ ن،مولانا عبدالصمد معاذ نائب امیر مرکزی جمعیت اہلحدیث پاکستان،جاویداختر قادری چےئرمین سنی علماء کونسل ،ارشد سندھو رہنماء جماعت اسلامی ،ڈاکٹر ظفر اقبال چیمہ چےئرمین ملی مسلم لیگ فیصل آباد،ابوبصیررہنما دفاع پاکستان کونسل ،ابوسعد و دیگر نے اقبال سٹیڈیم میں واقع ہوٹل میں آل پارٹیز کشمیر کانفرنس میں اظہار خیال کرتے ہوئے کیا۔ جماعۃ الدعوۃفیصل آباد کے مسؤل شیخ فیاض احمد نے کہا کہ کشمیر کا ہر فرد اہل پاکستان سے تعاون کی اپیل کر رہا ہے۔ قرآن کی رو سے ہم پر ان کی مدد کرنا فرض ہے۔ اہل کشمیر آج اپنے شہداء کو پاکستان کے پرچم میں لپیٹ رہے ہیں اور ان کی قبروں پر پاکستان کا جھنڈا لہرا رہے ہیں۔ کشمیری پاکستان کے لیے اپنا خون پیش کر رہے ہیں، سوال یہ ہے کہ ہمارے حکمران ان کے لیے کیا کردار ادا کر رہے ہیں؟ برہان وانی، عبدالمان جیسے کتنے نوجوان شہداء کی فہرست میں شامل ہوچکے ہیں۔ کیا عالمی برادری کو یہ سب قربانیاں نظر نہیں آتی؟ اقوام متحدہ ان مظالم پر خاموش کیوں ہے؟ انہوں نے کہا کہ کشمیریوں کے اربوں روپے کے نقصان ہوئے لیکن وہ اپنے مطالبے سے پیچھے نہیں ہٹے۔ وہ آج بھی پاکستان کا نعرہ لگا رہے ہیں اور اپنا خون پیش کر رہے ہیں۔ صاحبزادہ مفتی ضیاء مدنی رہنما متحدہ علماء کونسلنے کہا کہ آج کشمیر میں خون کی ہولی کھیلی جارہی ہے۔ کشمیریوں نے کسی صورت بھارت کے قبضے کو برداشت نہیں کیا۔ کشمیری چاہتے ہیں کہ ان کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق استصواب رائے کا حق ملے۔ افسوس ناک امر یہ ہے کہ اقوام متحدہ کشمیریوں کو تحریک کو نظر انداز کر رہی ہے۔ وہ ستر سال سے اپنی آزادی کے لیے لڑ رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یوم کشمیر قریب آنے کے باوجود وزیر اعظم عمران خان کا کوئی کردار نظر نہیں آرہا۔ کشمیریوں کو مزید آزمائش سے نہ گزارے۔ ہم کشمیریوں کے ساتھ کھڑے ہیں اور اپنی تحریک جاری رکھیں ۔حافظ عبدالرؤف رہنما تحریک آزاد ی جموں کشمیرے کہا کہ موجودہ حکومت کشمیر کی اہمیت کو سمجھنے سے قاصر نظر آ رہی ہے۔ کشمیریوں سے ہمارا رشتہ کلمہ طیبہ اور انسانیت کے ناطے سے ہے۔ کشمیر کی تحریک میں برہان وانی جیسے نوجوانوں کا کردار ہے۔ وہ اپنے حقوق اور آزادی کی جنگ لڑ رہے ہیں۔ ہم مسئلہ کشمیر پر عالمی برادری کو جگانے میں ناکام ہوئے ہیں۔ وقت آگیا ہے کہ ہم تحریک آزادی کشمیر کو بھرپور طریقے سے اجاگر کریں۔قاری شبیر عثمانی جمعیت علماء کونسلنے کہا کہ قائد اعظم اور لیاقت علی خان کی کشمیر پر تقریریں ہمارے لیے اہمیت کی حامل ہیں۔ اقوام متحدہ امریکا کی لونڈی ہے، وہ مسلمانوں کو ان کے حقوق نہیں دلا سکتی۔ کشمیر کے مسلمانوں پر عرصہ حیات تنگ کیا گیا ہے۔ ہم کشمیر کی آزادی تک اپنی جدوجہد جاری رکھیں گے۔

(Visited 26 times, 1 visits today)

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *