شاعری ۔۔۔ اسماء طارق ۔ گجرات

دل جلانے کی بات کرتے ہو
ایسے آنے کی بات کرنے ہو

ہمیں در در رول کر
ٹھکانے کی بات کرتے ہو

ہمیں راستوں کی خبر نہیں
تم منزلوں کی بات کرتے ہو

ہم سے شوق آرزو چھین کر
ملنے کی بات کرتے ہو

پنجرے میں بند چڑیا سے
باد صبا کی بات کرتے ہو

دل جلانے کی بات کرتے ہو
ٹھکانے کی بات کرتے ہو

کچی بستی کے مکینوں سے
محلوں کی بات کرتے ہو

راستے میں ساتھ چھوڑ کر
ساتھ نبھانے کی بات کرتے ہو

دل جلانے کی بات کرتے ہو
مسکرانے کی بات کرتے ہو

(Visited 30 times, 1 visits today)

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *